کئی ماہ کے بندش کے بعد سعودی عرب نے دوبارہ مسجد حرم عمرہ زائرین کے لئے کھول دی

Share with your love one
Makkah Grand mosque reopen for Umrah

سعودی عرب میں کورونا کی وبا کے باعث عمرے کی عارضی معطلی کے بعد زائرین کے پہلے گروپ نے تقریبا سات ماہ بعد مسجد الحرام میں عمرے کی ادائیگی کا آغاز کردیا۔
اتوار ٤ اکتوبر رات بارہ بجے کے بعد محدود عمرہ بحال کردیا گیا۔ مکہ مکرمہ میں سخت حفاظتی انتظامات کے ساتھ عمرہ زائرین کے استقبال کے لیے تیاریاں پہلے ہی مکمل تھیں۔
سعودی وزارت حج و عمرہ اور سرکاری خبر رساں ایجنسی ایس پی اے نے اپنی ویب سائٹ پر تصاویر اور وڈیو شیئر کی ہیں جس میں عمرہ زائرین کے پہلے گروپ کو مسجد الحرام میں داخل ہوتے، احتیاطی تدابیر کی پابندی اور طواف کرتےدکھایا گیا ہے۔

یاد رہے کہ سعودی حکومت نے اتوار٤ اکتوبر سے سعودی شہریوں اور مقیم غیرملکیوں اور اس کے ایک ماہ بعد بیرون مملکت سے زائرین کو عمرہ کی اجازت دی ہے۔ محدود عمرہ کی شروعات روزانہ ٦ ہزار زائرین سے کی گئی ہے۔

پریذیڈنسی کے مطابق ابتدا میں طواف صرف دو لائنوں میں کیا جا رہا ہے- ١٠٠ افراد ١٥ منٹ میں ساتوں چکر مکمل کرلیں گے۔ ایک گھنٹے میں ٤ سو افراد ٧ چکر لگا سکیں گے۔ اس طرح ایک دن میں ٦ ہزار افراد آسانی سے عمرہ کریں گے۔
تیسری لائن بھی کھولی جاسکتی ہے جس میں ١٥٠ افراد ہوںگے۔ یہ ١٥ منٹ میں سات چکر لگا سکیں گے۔ اس سے طواف کرنے والوں کی فی گھنٹہ تعداد ٦ سو تک پہنچ جائے گی۔ اس طرح ٦ ہزار افراد ہر ١٠ گھنٹے میں طواف مکمل کرسکیں گے۔

پریذیڈنسی نے مزید بتایا کہ عمرہ زائرین مسجد الحرام میں باب الجیاد اور باب ملک فہد سے داخل ہورہے ہیں پھر انہیں حرم مکی میں ایک خاص پوائنٹ پر جمع گیا اور وہاں سے شاہ فہد والی توسیع والے حصے میں جمع کرکے ان کی گروپ بندی کی گئی پھر گروپوں کو مطاف روانہ کیا جا تا رہاا۔ ہر گروپ میں ١٠٠ افراد شامل ہیں۔ اجتماع کی جگہ سے گروپ کو طواف کے لیے مختص ٢ لائنوں پر پہنچایا جارہا ہے۔ ہر لائن میں ١٠٠ افراد شامل ہیں۔ طواف سے فراغت کے بعد گروپ کو دو(٢) رکعت طواف ادا کرنے کا موقع دیا جائے گا۔ اس کے بعد طواف کی سنتیں پڑھنے پر انہیں صفا لے جایا جائے گا۔ جہاں وہ سعی کریں گے۔ عمرے سے فراغت کے بعد زائرین کو واپسی کے لیے مقرر جگہ لے جایا جائے گا۔

پریذیڈنسی نے مزید بیان میں کہا کہ عمرہ زائرین کی گروپ بندی کے لئے متعدد سائٹیں تیار کی گئیں ہیں۔
١: پہلے مرحلے میں روزانہ چھ ہزار (٦٠٠٠) زائرین کدائی اور الشبیکہ میں جمع ہوں گے۔
٢: دوسرے مرحلے میں روزانہ پندرہ ہزار(١٥٠٠٠) عمرہ زائرین یہ کدائی، الشبیکہ اور باب علی تین مقامات پر جمع ہوں گے۔
٣: تیسرے مرحلے میں روزانہ ساٹھ ہزار (٦٠٠٠٠) عمرہ زائرین یہ کدائی، الشبیکہ، باب علی، الغزہ اور جرول مقامات پر جمع ہوں گے۔
٤: چوتھے مرحلے میں سو فیصد(١٠٠%) گنجائش کے ساتھ ہو گا ( کدائی، الشبیکہ، باب علی، غزہ اور جرول) مقامات پر جمع ہوں گے۔
پھر انہیں صحت کی سہولیات کے کے مطابق بسوں کے ذریعہ مسجد حرم پہنچایا جائے گا۔

پریذیڈنسی نے مزید بتایا کہ مسجد حرم میں فرائض انجام دینے کے لئے ١٠٠٠ سے زائد ملازمین کو بھرتی کیا گیا ہے، تاکہ احسن طریقے سے عمرہ زائرین کی عمرہ ادا کرنے میں مدد کرے.
پریذیڈنسی نے بتایا کہ عمرہ گروپس سے پہلے اور بعد میں ایک دن میں 10 بار مسجد حرم کی صفائی کی جائے گی، بیت الخلا کو دن میں 6 مرتبہ صاف کیا جائے گا، قالینوں ، زمزم کے پانی کے چشموں کے بیسنوں اور تمام گاڑیوں کو جراثیم سے پاک کیا جائے گا۔

پریذیڈنسی برائے امور برائے مسجد حرم اور مسجد نبوی نے تھرمل کیمرے لگائے ہیں، تاکہ دونوں مقدس مساجد کوویڈ-19 سے پاک رکھ سکے۔

ذرائع: اردو نیوز

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *